’یوپی کے 75 اضلاع میں مدارس کے سروے کا کام مکمل، 7.5 ہزار غیر تسلیم شدہ مدرسوں کی نشاندہی

 



مدرسہ ایجوکیشن کونسل کے چیئرمین ڈاکٹر افتخار احمد جاوید نے جمعہ کو کہا کہ پورے صوبہ میں سروے کے دوران تقریباً 7500لکھنؤ: یوپی کی وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ کی قیادت والی بی جے پی حکومت نے ریاست بھر کے 75 اضلاع میں موجود مدارس کا سروے مکمل کر لیا ہے۔ سروے کے دوران غیر تسلیم شدہ مدارس کی بھی نشاندہی کی گئی۔ اتر پردیش حکومت کا کہنا ہے کہ اس سروے کا مقصد ریاست میں موجود مدارس کو جدید تعلیمی نظام سے جوڑنا اور وسائل کی دستیابی کو یقینی بنانا ہے۔

مدرسہ ایجوکیشن کونسل کے چیئرمین ڈاکٹر افتخار احمد جاوید نے جمعہ کو کہا کہ پورے صوبہ میں سروے کے دوران تقریباً 7500 غیر تسلیم شدہ مدارس کی نشاندہی کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ 15 نومبر تک سروے کی مکمل رپورٹ ضلع مجسٹریٹ کے ذریعے تمام اضلاع سے سرکاری سطح پر آجائے گی۔

ڈاکٹر جاوید نے کہا کہ سروے سے حاصل ہونے والے اعداد و شمار کی بنیاد پر بچوں کے لیے معیاری تعلیم کا بندوبست کرتے ہوئے ان کی بہتر نشوونما کر کے انہیں ملک اور معاشرے کے مرکزی دھارے میں لانے کی کوشش کی جائے گی۔ قابل ذکر ہے کہ اتر پردیش میں غیر تسلیم شدہ مدارس کے سروے کا کام کیا جا رہا ہے۔ آج سروے کی آخری تاریخ تھی، اس کے بعد ضلع مجسٹریٹ کے ذریعہ 15 نومبر تک رپورٹ حکومت کو بھیجی جانی ہے۔

ڈاکٹر جاوید نے واضح کیا کہ غیر تسلیم شدہ مدارس کے سروے سے ان کی قانونی حیثیت یا غیر قانونی ہونے کے حقائق سامنے نہیں آئیں گے۔ یہ سروے اصلی یا نقلی مدارس کی شناخت کے لیے کیا گیا ہے، لیکن تعلیمی معیار اور تعلیمی مراکزکے طورپر ان کی تعداد، ان کے انتظامات وغیرہ کے بارے میں درست معلومات حاصل کرنے کے لیے کیا گیا ہے۔ اس کا کسی بھی طرح سے، کسی بھی قسم کی جانچ سے دوردورتک کوئی تعلق نہیں ہے۔ غیر تسلیم شدہ مدارس کی نشاندہی کی گئی ہے اور 15 نومبر تک مکمل رپورٹ سامنے آ جائے گی

Post a Comment

Previous Post Next Post